خواجہ محمدآصف کا قومی اسمبلی میں خطاب اور جہانگیر ترین کا جواب PTI رہنما نے خواجہ آصف کو جھوٹاقراردےکربڑامطالبہ کردیا

(اہم نیوز)پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنماء جہانگیرترین نے کہا ہے کہ خواجہ آصف نے ایوان میں میرے متعلق جھوٹا بیان دیا،خواجہ آصف اپنا بولا ہوا جھوٹ فوراً واپس لیں،چیئرمین نیب کیخلاف پروگرام کرنے والے میڈیا چینل میں شراکت دار نہیں ہوں۔ انہوں نے ن لیگی رہنماءخواجہ آصف کے بیان پر اپنے ردعمل میں کہا کہ خواجہ آصف کی جھوٹ بولنے کے حوالے سے ایک مکمل تاریخ ہے۔

چیئرمین نیب کیخلاف پروگرام کرنے والے میڈیا چینل میں شراکت دار نہیں ہوں۔شراکت دار تو دور کی بات ایک شیئرہولڈر بھی نہیں ہوں۔انہوں نے کہا کہ خواجہ آصف نے ایوان میں میرے متعلق جھوٹا بیان دیا،خواجہ آصف اپنا بولا ہوا جھوٹ فوراً واپس لیں۔واضح رہے ن لیگ کے پارلیمانی لیڈر خواجہ آصف نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ چیئرمین نیب نے مختلف صحافیوں سے باتیں کیں، ایک کالم جاوید چودھری کا آیا ، چیئرمین نیب نے کہا کہ اگر کچھ حکومتی لوگوں کے خلاف ایکشن لیا توحکومت گر سکتی ہے۔
جس پر حکومت الرٹ ہوگئی۔ وزیراعظم سمیت تمام حکومتی لوگوں کے کیسز التوا کا شکار ہیں۔ میں نہیں چاہتا کہ بلاوجہ کوئی سیاستدان انکوائریاں بھگتے، جس پر حکومت نے چیئرمین نیب کو بلیک میل کرنے کا فیصلہ کیا۔انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب کے اسکینڈل کی جس ٹی وی چینل نے خبر بریک کی، جہانگیرترین اس میں حصے دار ہیں۔اسی طرح طاہر خان مالک ہیں یا نام نہاد حصے دار ہیں، لیکن وہ معاون خصوصی رہے۔کل ٹی وی پر بیٹھ صداقت علی عباسی نے کہا کہ وہ معاون خصوصی تھے لیکن اب وہ اجلاسوں میں نہیں آتے۔
انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی اورہمارے دورمیں نیب قوانین میں ترامیم نہیں کی گئی یہ ہماری ناکامی ہے۔ حکومت نے اپنے لوگوں کوبچانے کیلئے نیب میں بعض ترامیم تجویزکیں۔ نیب قوانین کی وجہ سے نوازشریف جیل میں قید ہیں۔ آصف زرداری، اسپیکرسندھ اسمبلی سراج درانی بھی نیب قوانین کی زد میں ہیں۔ حکومت چیئرمین نیب کوبلیک میل کرنا چاہتی ہے۔ چیئرمین نیب کے معاملے پرحکومت نے شرمناک کردارادا کیا۔ چیئرمین نیب کے معاملے پرپارلیمنٹ کی خصوصی کمیٹی تشکیل دی جائے۔
پارلیمنٹ کی خصوصی کمیٹی چیئرمین نیب کے معاملے کی تحقیقات کرے۔ خواجہ آصف نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اندر لوگ عمران خان کوتبدیل کرنے کے لیے تیاربیٹھے ہیں۔ پی ٹی آئی کے ان لوگوں کا نام نہیں لے رہا لیکن اسپیکرصاحب کوپتا ہے۔ جس پر اسپیکر نے کہا کہ مجھے پارٹی کے ان لوگوں کا نہیں پتا۔ خواجہ آصف نے کہا کہ پی ٹی آئی کو وزیرخزانہ نہیں ملا ان کو لیزپرلینا پڑا ہے۔ موجودہ وزیرخزانہ مشرف دوراورپیپلزپارٹی دورمیں بھی رہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہماری سلامتی کو معاشی صورتحال کی وجہ سے خطر ہ ہے۔ ہمارے شہروں میں دہشتگردی سر اٹھا رہی ہے۔ سیالکوٹ میں باجوڑ کا محلہ ہے، کراچی بھرا پڑا ہے، ہم سب کے ہاتھ رنگے ہوئے ہیں۔ وہاں کے لوگوں کے مسائل اور تحفظات کو سیاسی طریقے سے حل کریں، ایسا نہ ہونے دیں کہ تشدد کی فضا قائم ہو۔خواجہ آصف نے کہا کہ ہمارے مذہبی، نسلی اور لسانی تقسیم کو ختم کرنے کی ضرورت ہے۔ ہمیں ان تمام معاملات کو سیاسی اور ایوان کے ذریعے حل کرنا چاہیے، بلوچستان ، کے پی ، کے تمام مسائل کو سیاسی طور پر حل کریں۔
سکیورٹی فورسز کو ایکسپوز نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے امریکا کی جنگ دو مرتبہ لڑی، اس کا خمیازہ کتنی نسلیں بھگتیں گی۔ ہمارے دشمنوں کے آلہ کار سرحد پار بیٹھے ہوئے ہیں،ہم دشمنوں میں گھرے ہوئے ہیں۔ایوان کو کردار ادا کرنا ہوگا۔اگر اب کچھ نہ کیا گیا تو تاریخ ہمیں معاف نہیں کرے گی۔انہوں نے کہا کہ ہمیں مودی کے یار کا طعنہ دیا گیا ، اب خود فون کیے جار ہے ہیں۔ خواجہ آصف نے کہا کہ ہماری معاشی آزادی پرسمجھوتا ہوچکا ہے۔
اس وقت جومعیشت کوچلا رہے ہیں ان کا کسی سیاسی جماعت سے تعلق نہیں۔ آئی ایم ایف کے لوگ ہماری معیشت پربیٹھ گئے ہیں۔ وزیر خزانہ بڑے تکبرکے ساتھ یہاں بات کرتے تھے ان کو اپنی ہی حکومت نے رخصت کردیا۔ کسی سیاسی کارکن کی اس سے زیادہ تذلیل نہیں ہوسکتی جس طرح سابق وزیر خزانہ کو رخصت کیا گیا۔ اسٹیٹ بینک اور وزارت خزانہ میں آئی ایم ایف کے لوگ بیٹھ گئے ہیں۔ اتنادیوالیہ پن کسی اورجماعت میں نہیں جتنا پی ٹی آئی میں ہے۔

Custom Advertisement

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 73

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 79

اپنا تبصرہ بھیجیں