پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف کا آئی ایم ایف رپورٹ پر شدید ردعمل۔رپورٹ انصر عباس

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف کا آئی ایم ایف رپورٹ پر شدید ردعمل

آئی ایم ایف رپورٹ نے نیازی حکومت کے پارلیمنٹ اور قوم سے جھوٹ کا پول کھول دیا ہے

حکومت نے پارلیمنٹ میں جھوٹ بولا کہ 500 ارب کے نئے ٹیکس لگائے لیکن آئی ایم ایف نے بتایا کہ 750 ارب کے نئے ٹیکس لگائے گئے ہیں

فاشسٹ حکومت 1600 ارب کا ریکارڈ ٹیکسوں کا بوجھ عوام پر لاد رہی ہے

90 ارب روپے کے اضافی ٹیکس تنخواہ دار اور کاروباری افراد سے وصول کیے جائیں گے جو معاشی دہشت گردی ہے

نئے ٹیکسوں سے پراپرٹی ٹیکس کا بوجھ 45 ارب جب بڑھ جائے گا

نئے گھر تو نہیں بنیں گے، لوگ اپنے گھر بھی بیچنے پر مجبور ہو جائیں گے

یہ حماقت کرکے کس منہ سے سلیکٹڈ وزیراعظم کہتے ہیں کہ پچاس لاکھ گھر بنائیں گے؟

سیمنٹ، سریا، زمین، پٹرول، ڈیزل اور خوراک کی قیمتوں میں پہلے ہی ہوشربا اضافہ ہو چکا ہے، حکومت جلتی پر تیل ڈال رہی ہے

سلیکٹڈ وزیراعظم ٹیکس گفٹ کا فیصلہ کرنے جا رہے ہیں، جہانگیر ترین نے انہیں لینڈکروزر کا جو تحفہ دیا ہے کیا وہ اس پر ٹیکس دیں گے؟

حکومت ان اہداف کو حاصل نہیں کرسکے گی، الٹا کاروبار کو کو مزید تباہ کرنے جارہی ہے

یہ تباہی کا نیا نسخہ ہے اور لوگوں کے کچن پر تالا لگانے کا منصوبہ ہے کیونکہ اس سے کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ ہوگا

اتنے بھاری ٹیکسوں سے بے روزگاری مزید بڑھ جائے گی

سلیکٹڈ کے وعدے جھوٹ،دعوے جھوٹ، اعدادوشمار جھوٹ، مقدمات جھوٹ

میڈیا پر اِس لئے پاپندی لگوائی جا رہی ہے کہ حقائق عوام کے سامنے نہ لائے جا سکیں اور عوام کو دھوکے میں رکھا جا رہا ہے

آئی ایم ایف نے گواہی دی ہے کہ نیازی حکومت اپنی قوم اور پارلیمان سے جھوٹ بولتی ہے

ٹیکسوں کے بارے میں جھوٹ بول کر پارلیمان کا استحقاق مجروح کیاگیا ہے

نیازی حکومت کی پارلیمنٹ کی توہین اور استحقاق مجروح کرنے کا معاملہ پارلیمنٹ میں اٹھائیں گے

پارلیمنٹ میں انہوں نے 516ارب روپے کے ٹیکس بتائے جبکہ آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ ستمبر تک 1000 ارب کے ٹیکس جمع کرنا ہوں گے

بھکاری حکومت نے ہر چیز پر جھاڑو پھر دیا ہے، آئندہ ماہ بجلی کی قیمت میں اڑھائی روپے فی یونٹ اضافے سے مہنگائی مزید بڑھے گی

خالی چیمبر حکمران کی وجہ سے قوم اور ملک کی جیب خالی ہورہی ہے

حکومتی وزراء اور ترجمانوں کو صرف جھوٹ بولنے پہ ترقی دی جاتی ہے

گیس میں پہلے ہی 200 فیصد اور بجلی کی قیمتوں میں مسلسل اضافے نے عوام کی زندگی پہلے ہی اجیرن بنا رکھی ہے

ان قیمتوں میں مزید اضافے سے ہر مہینے عوام کے اخراجات میں قیامت خیز اضافہ ہو جائے گا، وہ گزارا کیسے کریں گے؟

اس سے بڑی نالائقی اور کیا ہو گی کہ 47 سال میں کم ترین تین فیصد مہنگائی کی شرح بڑھا کر 13 فیصد پر پہنچا رہی ہے

عمران نیازی صاحب ان حالات میں غریب زندہ کیسے رہیں گے؟

صنعت، کاروبار اور دکان کو پہلے ہی تالا لگ چکا ہے، آپ پورے پاکستان کو تالا لگانے پر تلے ہوئے ہیں

Custom Advertisement

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 73

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 79

اپنا تبصرہ بھیجیں