سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے کیلئے حکومت کی جانب سے نئے قواعد نافذ ہونے کے ایک روز بعد ہی سوشل میڈیا کمپنیوں نے ان قواعد کے تحت کام جاری رکھنے کو مشکل قرار دیدیا ہے۔

سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے کیلئے حکومت کی جانب سے نئے قواعد نافذ ہونے کے ایک روز بعد ہی سوشل میڈیا کمپنیوں نے ان قواعد کے تحت کام جاری رکھنے کو مشکل قرار دیدیا ہے۔پاکستان چھوڑنے کی دھمکی

سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے کیلئے حکومت کی جانب سے نئے قواعد نافذ ہونے کے ایک روز بعد ہی سوشل میڈیا کمپنیوں نے ان قواعد کے تحت کام جاری رکھنے کو مشکل قرار دیدیا ہے۔

نجی خبر رساں ادارے ڈان نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق حکومت نےسوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے اور آن لائن مواد کو روکنے اور ہٹانے سے متعلق نئے قواعد 2020 کو نافذ کردیا ہے، طریقہ کار، نگرانی اور حفاظت قواعد 2020 کوپیکا2016 کے تحت وضع کیا گیا ہے۔

ان قواعد کے نافذ ہونے کے ایک روز بعد ہی سوشل میڈیا اور ٹیکنالوجی کمپنیوں نے اعلان کیا ہے ان قوانین کے تحت کام کرنا ممکن نہیں رہے گا اگر قوانین پر نظر ثانی نہ کی گئی تو پاکستان میں اپنی سہولیات بند کردیں گے۔

ایشیا انٹرنیٹ اتحاد(آے آئی سی) کی جانب سے دیئے گئے ایک بیان میں ان حکومتی قواعد کو انٹرنیٹ کمپنیوں کو براہ راست ہدف بنانے والا اور مبہم قرار دیدیا ہے، اے آئی سی کے مینجنگ ڈائریکٹر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ان قواعد کو نافذ کرنے سے پہلے جس مشاورت کا وعدہ کیا گیا تھا وہ کبھی نہیں ہوئی اور قوانین نافذ کردیئے گئے ہیں۔

کمپنیوں نے خبردار کرتے ہوئے جس قسم کے قواعد حکومت نافذ کرنے جارہی ہے ان کے تحت کمپنیوں کو پاکستان میں صارفین اور کاروباری اداروں کو اپنی سہولیات فراہم کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا، ڈیٹا لوکلائزیشن کےسخت ضوابط کرے بعد پاکستان میں سستے اور مفت انٹرنیٹ کی رسائی ممکن نہیں رہ سکے گی، اور اس کے ساتھ ساتھ پاکستان کی ڈیجیٹل معیشت بھی شدید متاثر ہوسکتی ہے۔

ان کمپنیوں نے پاکستان ٹیلی کمیونیکشن اتھارٹی کو ملنے والے وسیع اختیارات پر بھی تحفظات کا اظہار کیا اور کہا کہ پی ٹی اے سوشل میڈیا کمپنیوں کو اظہار رائے کی آزادی کے بنیادی اصولوں کی خلاف ورزی پر مجبور کرسکتا ہے

Custom Advertisement

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 73

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 79

اپنا تبصرہ بھیجیں