جہانگیرترین سے ہاتھ ملاناپسند نہیں۔لیڈرشپ میں اختلافات کھل کر سامنے آگئے

لاہور(اہم نیوز) تحریک انصاف کو جوڑنے والے سینئر پارٹی رہنماء جہانگیرترین ہی پارٹی رہنماؤں میں اختلافات  کا باعث بن گئے، گورنر پنجاب کے بعد سینئر پی ٹی آئی رہنماء حامد خان بھی جہانگیرترین کے خلاف بول اٹھے۔ انہوں نے کہا کہ جہانگیرترین سے ہاتھ ملانا بھی پسند نہیں کرتا، ایسے لوگ پارٹیوں کو ہائی جیک کرنے آتے ہیں۔ انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کی وکالت نہ کرتا تووہ تاریخ کا حصہ بن چکے ہوتے۔
پنجاب میں عثمان بزدار سے بہتر شخص لانا چاہیے تھا۔ حامد خان نے کہا کہ جہانگیرترین ترین جیسے لوگ پارٹی کو ہائی جیک کرنے آتے ہیں۔جہانگیرترین سے ہاتھ ملانا بھی پسند نہیں کرتا۔ اس سے قبل گورنرپنجاب نے بھی جہانگیرترین کو آڑے ہاتھوں لیا تھا۔
گورنر پنجاب چوہدری سرورنے بھی گزشتہ دنوں نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ پارٹی میں سب کچھ جہانگیرترین ہیں تو کون سے آلو چنے بیچنے آئے ہیں، کسی نے مجھے ہٹانے کا سوچا بھی تو پہلے ہی استعفیٰ دے دوں گا۔
انہوں نے کہا کہ کچھ لوگوں کو تکلیف ہے کہ میں صاف پانی عوام کو کیوں دے رہا ہوں کسی نے مجھے ہٹانے کا سوچا تو پہلے استعفیٰ دے دوں گا، اگر سب کچھ جہانگیر ترین ہیں تو ہم یہاں آلو چنے بیچنے نہیں آئے؟ پارٹی میں اختلافات ہوتے ہیں مگر وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں سب متحد ہیں۔ گورنر چوہدری سرور نے کہا کہ وزیراعلی عثمان بزدار سے میرا کوئی جھگڑا نہیں ہے اور وزیراعلیٰ پنجاب کو ہٹانے سے متعلق بھی کوئی بات میرے علم میں نہیں ہے۔ چوہدری سرور نے کہا کہ پانچ لاکھ گھر تو بنائے جا سکتے ہیں لیکن حکومت کیلئے پچاس لاکھ گھر بنانا بہت مشکل ٹارگٹ ہے۔ حکومت اپنے پانچ سال پورے کرے گی، حکومت کہیں نہیں جا رہی ہے۔عمران خان عوام مسائل حل کرنے کیلئے کام کر رہے ہیں۔ عمران خان کے پاس کوئی جادو کی چھڑی نہیں ہے کہ وہ فوری مسائل حل کردیں۔


Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 73

Notice: Undefined variable: aria_req in /home/ahemnew1/public_html/wp-content/themes/Ahmad Theme/comments.php on line 79

اپنا تبصرہ بھیجیں